دنیا کی خوش قسمت ترین عورت جو کینسر کا شکار ہونے

دنیا کی خوش قسمت ترین عورت جو کینسر کا شکار ہونے کی وجہ سے کروڑ پتی بن گئی، بیماری بھی ٹھیک ہوگئی اور مالا مال بھی ہوگئی، مگر کیسے؟ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا

لندن(نیوز ڈیسک) برطانوی خاتون جوائے سمتھ کو دنیا کی خوش قسمت ترین خاتون کہا جائے تو غلط نا ہو گا کیونکہ وہ ایک ایسے وقت پر مکمل صحتیاب ہو گئیں جب ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ وہ صرف ڈیڑھ ماہ زندہ رہ سکیں گی۔ صرف یہی نہیں بلکہ صحت و زندگی کے ساتھ کروڑوں روپے کا تحفہ بھی مل گیا۔

دی مرر کے مطابق جوائے سمتھ کا کینسر انہیں موت کے قریب لے جا چکا تھا لیکن وہ کہتی ہیں کہ اس موقع پر ایک سہیلی کے کہنے پر انہوں نے بھنگ کے تیل کا استعمال کیا اور انہیں یقین ہے کہ ان کے کینسر کی رسولی کو بھنگ کے تیل نے ہی ختم کیا ہے۔ اب وہ اپنے ملک میں اس تیل کا استعمال قانونی قرار دلوانے کے لئے مہم چلارہی ہیں۔

اخبار ’کوینٹری ٹیلی گراف‘ سے بات کرتے ہوئے جوائے کا کہنا تھا ”جب آپ کو بتایاجائے کہ آپ کی زندگی ڈیڑھ ماہ باقی رہ گئی ہے تو آپ کچھ بھی کرنے کو تیار ہوسکتے ہیں۔ شروع میں تو مجھے بھی اس بات پر یقین نہیں تھا کہ بھنگ کا تیل کینسر کے علاج میں مددگار ثابت ہوسکتاہے لیکن اب مجھے یقین ہے کہ میرے کینسر کا خاتمہ اسی تیل نے کیا ہے۔ میری بھرپور خواہش بھی ہے اور مطالبہ بھی کہ حکومت اس کے استعمال کو قانونی قرار دے کیونکہ یہ جانیں بچاسکتا ہے۔

loading...

مجھے ایک سہیلی نے بتایا کہ بھنگ کے تیل میں کینا بائی نائیڈ نامی کیمیکل موجود ہوتا ہے جو کینسر کے خلیات کو ختم کرنے میں معاون ثابت ہوسکتاہے۔ میری سہیلی نے اس کے بارے میں انٹرنیٹ پر پڑھا تھا اور پھر اس نے کسی ایسے شخص سے رابطہ کیا جو بھنگ کا تیل فراہم کر سکتا تھا۔ شاید انہوں نے نے بھنگ کے تیل میں زیتون کے تیل اور کچھ اور اجزاءکو مکس کرکے اس کے کیپسول بنائے تھے۔ اس میں بھنگ کے تیل کی مقدار بہت معمولی تھی لیکن مجھے اس کا غیر معمولی فائدہ ہوا۔ یہ ناممکن بات لگتی ہے لیکن میں نے سائنس کو شکست دے دی ہے۔

میں اپنی موت یقینی سمجھ رہی تھی اور دنیا سے جانے سے پہلے اپنی کچھ خواہشات کی تکمیل چاہتی تھی۔ اس ضمن میں ایک فلاحی ادارہ میری مدد کر رہا تھا اور انہوں نے مجھے 84000 پاﺅنڈ (تقریباً سوا کروڑ پاکستانی روپے) کا چندہ دیا تھا۔ میرے کینسر کے خاتمے کی اچھی خبر کے ساتھ ہی مجھے یہ اچھی خبر بھی ملی کہ یہ رقم میری ہے اور میں اسے جیسے چاہوں استعمال کر سکتی ہوں۔ دنیا میں کون ایسا ہو گا جو مجھ سے بڑھ کر خوش ہو۔ یقیناً میں بہت ہی خوش قسمت ہوں۔“

loading...

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.